weakness of nerves

بدنام زمانہ اعصابی کمزوری ہے کیا؟ Weakness of muscle 💪

بدنام زمانہ اعصابی کمزوری ہے کیا؟
Weakness of muscle 💪
ایک عام بولے جانے والا جملہ “مجھے اعصابی کمزوری ھے”
یہ چھوٹے موٹے الفاظ میں یہ مکالمہ ہوتا ہے آپ کو اعصابی کمزوری ہے, مجھے اعصابی کمزوری ہے,
ضعف عصبی, پٹھوں کی کمزوری
اس مرض میں اعصاب کمزور ہو جاتے ہیں۔ اور عصبی نظام میں خلل اور فتور پیدا ہو جاتا ہے۔
شدید جسمانی و دماغی محنت, زیابیطس کثرت ملاپ, نشہ آور چیزوں کا استعمال رنج و غم صدمہ ایکسڈنٹ, دبا ہوا جنسی جذبہ,
عام کمزوری کی تمام علامات پائی جاتی ہیں۔
معمولی کام سے تھکن محسوس ہوتی ہے, کام کرنے کو جی نہیں چاہئتا, مریض چڑچڑا پست ہمت اور کمزور ہو جاتا ہے۔ قوت فیصلہ ختم, بےخوابی, پریشانی خیالات اور وہم میں مبتلا رہتا ہے, دل دھڑکتا ہے, چہرہ بے رونق ہو جاتا ہے۔, کثرت احتلام جریان رقت, اور کمزوری مردانہ باہ, کبھی نامردی, توہمات کا شکار
مردوں میں خصیوں میں درد اور عورتوں میں خصیتہ الرحم اووریز میں درد کی شکایت ہوتی ہے۔, مریض خودکشی کی طرف راغب ہوتا ہے۔

اعصاب کیا ہیں, اس کو آسان لفظوں میں یوں کہنا سمجھنا چاہیے کہ “ہمارے دماغ میں سے نکلنے والی وائرنگ نروز جسم میں پھیلنے والی شاخوں کو اعصاب کہتے ہیں۔ ”
ان کے ذمے مختلف فرائض اور کام ہوتے ہیں مثلا” چھونے, پکڑنے, لکھنے, گرمی سردی کو محسوس کرنے جیسے یہ کام کرتے ہیں۔ اب ان میں گڑبڑ ہو جاۓ تو اپنا کام صحیح طرح انجام نہ دے پائیں گے اور تکلیف ظاہر ہوگی,
اب معالج پر منحصر ہے کہ کیا وجہ تشخیص کر کے اس کے مطابق علاج کرتا ہے۔ ایک کمزور جسمانی ساخت ٹڈی جیسا آدمی کم وزن والا کہتا ہے میری عمر 30-35 سال ہے میں اعصابی کمزوری میں مبتلا ہوں, شادی کے لائق بھی نہیں ہو پاتا, اس کو مضبوط بنانا ہے
دوسرا آدمی اس کے برعکس موٹا تازہ آدمی بھی اعصابی کمزوری کی شکایت کرتا ہے۔ اس کی وجہ تو تن آسانی, کام کی کثرت کا ہجوم یا قلبی ذہئنی دباؤ, سیر و تفریح ورزش کا نہ ہونا وغیرہ وغیرہ عوامل سامنے آتے ہیں,
ہم دنیا کی ہر چیزکا خیال اپنے سے زیادہ رکھتے ہیں لیکن اپنے جسم اور روح کے تقاضوں کو نہیں سمجھتے,
بیمار سوچ کا رخ بدل دینے سے زندگی میں بہار آجاتی ہے, جسم کے سُن ہو جانے کی وجوہات پر کتابیں بھری پڑی ہیں میرے کہنے کی کوشش کر رہا ہوں یہ تکلیف عام ہو چکی ہے,
آپ کے کچن کی اکثر اشیاء اعصابی کمزوری کیلیے مفید ہیں مثلا” گرم مصالحہ کے تمام چیزیں یعنی. لونگ, دارچینی, جائفل, جاوتری, زیرہ سفید یا کالا اس کے علاوہ ادرک, لہسن, پیاز یہ سب قدرتی سٹیرائیڈ قوت بخش اشیاء ہیں,
ایک سوال پیدا ہوتا ہے کہ جن افراد کی غذا میں یہ اشیاء شامل ہیں پھر ان کو اعصابی کمزوری کیوں ہوتی ہے۔ یہ معمہ مریض و معالج مل کر حل کر سکتے ہیں۔ اس کی عمومی وجہ نظام ہضم کی کمزوری, ورزش اور اطمینان کی کمی ہے,
ہم اپنی معاشرت کو بھلا کر ہم ٹانکس اور اشتہار بازی کے قیدی بن گئے, جب گاڑی میں پٹرول ختم ہو جاے تو وقتی طور پر دھکا لگانا پڑتا ہے پھر پٹرول ڈالنے کے بعد دھکا لگانے کی ضرورت نہیں رہتی, لیکن ہمارا طرز زندگی عمل یہ ہے پٹرول نہیں ڈالنا, دھکا لگا کر گاڑی گھسٹینی ہے
پہلے اعصابی کمزوری کا رونا صرف ادھیڑ عمر کے مرد اور خواتین یا بیمار لوگ کرتے تھے اب تو بچے اور نوجوان لڑکے لڑکیاں اس علامت کے ذیادہ مریض دیکھنے میں آتے ہیں, کیونکہ غذائیت ناقص ہے

اعصابی کمزوری کی علامات، اسباب اور علاج
ھر تیسرا شخص مرد و عورت نوجوان بوڑھے اس کا شکار ھے ۔۔
اعصابی کمزوری ایک ایسی بیماری ہے جس میں انسان کا اعصابی نظام متاثر ہوتا ہے اور اس کی علامات میں انسان کے اعضا کا درست طریقے سے کام نہ کر سکنا شامل ہے۔علامات میں کانپنا، اعضا کو مکمل طور پر ہلا نہ سکنا اور چلنے میں تکلیف جیسے مسائل شامل ہیں۔ مریض کو سونے میں دشواری کے ساتھ ساتھ جذباتی مسائل کا بھی سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔ اس بیماری کے متعلق ماہرین کا کہنا ہے کہ ورزش کرنا اس بیماری میں مبتلا افراد کے لیے دوا کی طرح اہم ہے، ضروری نہیں کہ یہ ورزش بہت شدید نوعیت کی ہو، ہلکی پھلکی ورزش کو بھی انسان اپنی روزمرہ زندگی کا حصہ بنا سکتا ہے۔

اعصاب ہمارے جسم کا ایک انتہائی اہم اور لازمی حصہ ہیں۔ معاشی تفکرات،بے یقینی کی کیفیت اور ملکی حالات نے ہم سب کو اعصابی مریض بنا دیا ہے۔ اعصاب حرام مغز سے جڑا وہ نظام ہے جو پورے جسم کے تمام تر افعال کو کنٹرول کرنے میں بنیادی کردار کا حامل ہے۔اعصاب ہمارے جسم کی حرکات و سکنات کو منظم کر کے دماغ سے اعضا اور اعضا سے دماغ تک پیغام رسانی کا کا م بخوبی سر انجام دیتے ہیں۔اعصاب ڈوری نما ریشے ہیں جو دماغ کو بدن انسانی کے دیگر نظاموں سے مربوط رکھے ہوئے ہیں جب اعصاب میں کمزوری واقع ہو یا ان کی کار کردگی میں نقص آنے لگے تو انسانی بدن بہت سے مسائل کا شکار ہو جاتا ہے۔

اعصابی کمزوری کے صحت (health) پر اثرات
اعصابی کمزوری سے پورا بدن کمزوری میں مبتلا ہونے لگتا ہے۔چونکہ نہ صرف عصبی نظام بلکہ انسانی جسم کے تمام تر نظام ہی دماغ کے تابع افعال سر انجام دیتے ہیں اور با لواسطہ یا بلا واسطہ یہ سب اعصابی نظام سے مربوط بھی ہو تے ہیں۔یوں جب اعصابی نظام کی کار کردگی میں خرابی پیدا ہوتی ہے تو پوارا بدن انسانی متاثر ہونے لگتا ہے۔

جسمانی کمزوری نمایاں ہو کر سستی وکاہلی کا غلبہ ہونے لگتا ہے۔
چہرہ بے رونق ہو کر افسردگی سی چھانے لگتی ہے۔
پورے بدن میں دردیں اور کندھوں،کمر اور ٹانگوں میں شدید درد رہنے لگتا ہے۔
بھوک کم ہونے کی وجہ سے کچھ کھایا پیا بھی نہیں جاتا نتیجتاً انسان نحیف و ضعیف ہو کر وقت سے پہلے ہی موت کی تمنا کرنے لگتا ہے۔
کسی کام میں دل نہیں لگتا طبیعت میں اداسی اور اکتاہٹ نمایاں ہونے لگتی ہے۔
بعض اوقات مریض مایوسی اور نا امیدی میں اس قدر گھر جاتا ہے کہ خود کشی تک کرنے کے بارے میں سوچنے لگتا ہے۔
گھبراہٹ اور خوف سے ہاتھ پاؤں سرد اور ٹھنڈے پسینے بھی بکثرت آنے لگتے ہیں۔
علاوہ ازیں کئی دیگر عوامل جیسے ضعفِ دماغ ،خون کی کمی،ذیابیطس،لو بلڈ پریشر، کثرتِ فکر و غم،اچانک صدمہ،نشہ آور اشیا کا بکثرت استعمال، بھی اعصابی کمزوری کا سبب ہو سکتے ہیں۔

سب سے پہلے اپنے مرض کے اسباب پر غور کریں اور اپنے معالج کو مکمل تفصیلات سے آگاہ کریں۔بعد ازاں اپنے معالج کی ہدایات پر عمل کرتے ہوئے اپنی خوراک کو متوازن کریں۔پھل،دودھ اور خشک میوہ جات کی مخصوص مقدار کو اپنی روزمرہ غذا میں لازمی شامل کریں۔

💯خاص باتیں آسان اور بہترین اعلی علاج
ایک کپ گرم دودھ میں آدھی یا تہائی چمچی ہلدی حل کر کے بطور چاے پی جاے تو بہتر ہے کہ شہد یا دیسی گڑ سے میٹھا کیا جاے,
گرم دودھ میں السی کا سفوف ایک یا آدھی چمچی حل کر کے پی جاے مذید غذائیت چاہتے ہیں تو گھی میں تھوڑا سا آٹا بھون کر اس میں شامل کرکے سفوف السی یا سالم السی شامل کر دی جائے,
تخم ہالوں یا ہالیہ اسی ترتیب سے استعمال کی جائے,
ایک انڈا پھنیٹ کر اسمین ایک کپ دودھ اور شہد یا چینی حسب ضرورت ملا کر پھینٹ کر ہلکی آنچ پر گرم کر کے گرم گرم پیا جاے,
موسم گرم ہو تو پکا کر ٹھنڈا کر کے چمچ سے کھایا جاۓ اسی کو پڈنگ کہتے ہیں۔
کسی بھی میسر گوشت کی یخنی نیم گرم پی جاۓ,
کھجور کی گٹھلیاں نکال کر گرائنڈ کرلیں, اسی طرح بادام گرائنڈ کر لیں دونوں کو ملا کر محفوظ کرلیں, حسب ضرورت یہ سفوف گرم دودھ میں حل کرکے پئیں چائیں تو اس میں چھوٹی الائچی کا دانہ نکال کر اس کا سفوف شامل کرلیں, اس سے اعصاب کے ساتھ دل کو اور شوگر کو فائدہ ملتا ہے
🔥نسخہ ہربل چاے
لیمن گراس 10 گرام, مالٹے کا چھلکا 10 گرام, لونگ 5 گرام, دارچینی 5 گرام, چھوٹی الائچی 5 گرام, بادیاں خطائی 5 گرام سب کو موٹا موٹا سفوف بنا کر ایک پاؤ پانی میں رات کو بھگو دیں, صبح مل چھان کر آدھا کلو چینی میں ہلکی آنچ پر پکائیں, جب دو جوش آ جائیں تو ڈھانپ کر ٹھنڈا کر کے چھان کر خشک بوتل میں محفوظ کر لیں,
باوقت ضرورت ایک کپ گرم پانی میں حسب ذائقہ ہربل چاے شامل کرکے نوش کریں, یہ مشروب بارہ مہینے قابل استعمال ہے,
مفرح و مقوی اعصاب اور ہاضم ہے چستی و توانائی بخشتا ہے پیشاب کھل کر, ایام کھل کر آتے ہیں, دماغی کام کرنے والوں کے لیے بہترین ٹانک ہے, پراسٹیٹ غدود بڑھ جانے والے مریضوں کیلیے مفید ہے۔ دن میں دو تین بار پینے میں کوئی مضائقہ نہیں,
#نوٹ یہ پوسٹ معلومات, عوام الناس کی معلومات اور مفاد عامہ کے تحت جنرل ہیلتھ ایجوکیشن کیلیے لکھی ہے,
آپ کو کوئی بیماری ہے تو آپ علاج کیلیے اپنے ہیلتھ کئیر پروائئڈر یا معالج سے رجوع کریں۔
Disclaimer: All information is provided here only for general health education and information, Please consult your Health Physician regarding any treatment of health issues.
Shearing Mazhar Hussain

Submit a Comment